24

استعفیٰ دے کر پارلیمنٹ چھوڑنا غلط فیصلہ ہو گا، سلیم مانڈوی والا

اسلام آباد: پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا نے کہا ہے کہ استعفیٰ دے کر پارلیمنٹ کا فورم چھوڑنا غلط فیصلہ ہو گا۔

سابق ڈپٹی چیئرمین سینیٹ اور پیپلز پارٹی کے رہنما سلیم مانڈوی والا نے استعفوں کے معاملے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز پارٹی نے پہلے بھی کہا ہے کہ پارلیمنٹ کا فورم نہیں چھوڑنا چاہیے اور اگر استعفے دینے کا فیصلہ کیا گیا تو یہ غلط ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے جو پوزیشن لی اس پر حکومت بوکھلا گئی ہے اور الیکشن کمیشن کے فیصلے سے جو متاثر ہو وہ عدالت جا سکتا ہے۔

سلیم مانڈوی والا نے کہا کہ الیکشن کمیشن سے مستعفی ہونے کا مطالبہ درست نہیں ہے اور یہ بات واضح ہے کہ یوسف رضا گیلانی جیت چکے ہیں۔ مظفر حسین شاہ نے پتہ نہیں کیوں یہ ووٹ مسترد کیے۔

اس سے قبل وزیر اعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا تھا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) فیصلہ نہیں کر سکی کہ استعفے دینے ہیں یا لینے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت فارن فنڈنگ کیس کے فیصلے سے خوفزدہ ہے، شاہد خاقان عباسی

فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم والے ملک کو بحرانوں سے نکالنے کی باتیں کررہے ہیں حالانکہ بحرانوں کی ذمہ دار یہی مفاد پرست اور کرپٹ گاڈ فادرز خود ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں