96

اسلام آباد ٹریفک حادثہ، کشمالہ طارق کے لوگوں نے کسی کو آگے نہیں جانے دیا کشمالہ طارق کے قافلے میں موجود گارڈز نے دھمکی دی تھی کہ جو آگے آیا اُسے بھون دیں گے۔ صحافی صدیق جان

اسلام آباد ٹریفک حادثہ، کشمالہ طارق کے لوگوں نے کسی کو آگے نہیں جانے دیا
کشمالہ طارق کے قافلے میں موجود گارڈز نے دھمکی دی تھی کہ جو آگے آیا اُسے بھون دیں گے۔ صحافی صدیق جان

اسلام آباد میں کشمالہ طارق کے قافلے سے گاڑی کی ٹکر کے واقعہ پر مزید انکشافات سامنے آگئے۔ تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے صحافی صدیق جان نے بتایا کہ نور الامین دانش ایک کرائم رپورٹر ہیں ، انہوں نے اس واقعہ کے حوالے سے بتایا کہ اُس رات وہ بھی اُسی طرف سے آ رہے تھے جہاں سے کشمالہ طارق کی گاڑیوں کا قافلہ آیا تھا اور جس میں کشمالہ طارق کا بیٹا اور باقی سب لوگ تھے۔
نور الامین نے کہا کہ جیسے ہی یہ گاڑیاں ہمارے پاس سے گزریں تو ہمیں ایسے لگا کہ جیسے کوئی ہوائی جہاز ہمارے پاس سے گزر کر گیا ہے۔ جیسے ہی ہم آگے اشارے پر پہنچے اُس وقت حادثہ ہو چکا تھا۔ ان کی ایک گاڑی ائیر بیگز کُھلنے اور لاک ہونے کی وجہ سے رُک گئی تھی جس کی وجہ سے انہیں مجبوراً رُکنا پڑا۔
جیسے ہی یہ لوگ رُکے ، پولیس اور ریسکیو کے آنے سے پہلے ان کے اپنے لوگ وہاں پہنچ چکے تھے۔

صدیق جان نے بتایا کہ تمام لوگوں کو کہہ دیا گیا تھا کہ کوئی آگے نہیں آئے گا، اگر کسی نے آگے آنے کی کوشش کی تو اسے بھون کر رکھ دیں گے۔ صدیق جان نے بتایا کہ یہ تمام ویڈیو نور الامین نے ہی بنائیں کیونکہ وہ ایک رپورٹر تھے اور انہوں نے ہمت کا مظاہرہ کیا۔ صدیق جان نے مزید کیا بتایا آپ بھی بتائیں:

یاد رہے کہ تین روز قبل اسلام آباد میں سری نگر ہائی وے پر تیز رفتارگاڑی نے 6 افراد کوکچل دیا تھا، حادثے میں 4 افراد جاں بحق اور 2 زخمی ہوئے جبکہ کار سوار فرار ہو گیا تھا۔
حادثے کا باعث بننے والی گاڑی وفاقی محتسب کشمالہ طارق کا بیٹا اذلان چلا رہا تھا۔ جبکہ گاڑی میں وفاقی محتسب کشمالہ طارق اور ان کے شوہربھی موجود تھے۔ پولیس کشمالہ طارق کے بیٹے اذلان کی گرفتاری کے لیے تاحال کوئی کارروائی نہیں کر سکی۔ تیز رفتارگاڑی کی ٹکر سے 4 افراد کی موت کا مقدمہ درج کرلیا گیا تھا ، ایف آئی آر میں کشمالہ طارق کے بیٹے اذلان کو بھی نامزد کیا گیا تھا۔ پولیس کے مطابق اذلان خان کی گرفتاری کے لیے مختلف علاقوں میں چھاپے مارے جارہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں