66

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیئرمین پی ٹی وی ، قائم مقام ایم ڈی سمیت 6 تعیناتیوں کے خلاف درخواستوں پر فریقین کونوٹس جاری کر دیئے

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیئرمین پی ٹی وی ، قائم مقام ایم ڈی سمیت 6 تعیناتیوں کے خلاف درخواستوں پر فریقین کونوٹس جاری کر دیئے

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیئرمین پی ٹی وی نعیم بخاری، قائم مقام ایم ڈی سمیت 6 تعیناتیوں کے خلاف درخواستوں پر فریقین کونوٹس جاری کر دیئے ۔ منگل کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے درخواست پر سماعت کی۔درخواست گزاروں کے وکلاء آصف گجر اور شکیل عباسی عدالت میں پیش ہوئے جبکہ چیئرمین پی ٹی وی کے جانب سے وکیل محمد حماد جبکہ وفاق کی جانب سے ڈپٹی اٹارنی طیب شاہ عدالت میں پیش ہوئے ۔
چیف جسٹس نے کہاکہ سپریم کورٹ کے فیصلے میں تعیناتی کا طریقہ کار واضح ہے۔ چیئر مین پی ٹی وی نے کہاکہ درخواست میں کہا گیا کہ تعیناتی کے لیے کوئی اشتہار نہیں دیا گیا، وفاقی حکومت کے پاس اختیار ہے کہ وہ کس کو تعینات کرے۔
چیف جسٹس نے پی ٹی وی کے وکیل سے استفسار کیاکہ جس کیس کا آپ حوالہ دے رہے ہیں اس میں عمر کی حد کیا ہی سپریم کورٹ کے فیصلے میں واضح کہا ہوا ہے تو پھر آپ کیسے کر سکتے ہیں ۔

وکیل چیئرمین پی ٹی وی نے عدالت سے استدعا کی کہ مجھے ریکارڈ دیکھنے کے لیے کل تک کا وقت دیں۔ عدالت نے وکیل چیئر مین پی ٹی وی کو ہدایت کی کہ ریکارڈ کو چھوڑیں آپ سپریم کورٹ کا فیصلہ پڑھ لیں۔ وکیل چیئر مین پی ٹی وی نے کہا کہ کمپنیز آرڈیننس کے مطابق بورڈ آف ڈائریکٹرز نے چیرمین کی تعیناتی کی ہے۔ چیف جسٹس نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے استفسار کیاکہ چیئرمین پی ٹی وی کی سمری وفاقی حکومت کو جب بھیجی تو اس میں کیا لکھا ہی وکیل چیئر پی ٹی وی نے کہاکہ چیرمین پی ٹی وی کی تعیناتی کی ایک سمری پہلے گئی اور پھر دوسری سمری بعد میں بھیجی گئی۔
عدالت نے فریقین کو دوبارہ نوٹسز جاری کرتے ہوئے آئندہ سماعت اٹارنی جنرل اف پاکستان خالد جاوید خان کو ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کی ہدایت کی ۔ عدالت نے سیکرٹری وزارتِ اطلاعات کو نمائندہ افسر مقرر کرنے کی ہدایت کی ،عدالت نے کیس کی سماعت 14 جنوری تک کے لئے ملتوی کردی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں