119

اسپیکر پنجاب اسمبلی نے لیگی ارکان کے استعفوں پر اہم فیصلہ کر لیا

لاہور : پاکستان مسلم لیگ سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے استعفے آنے کا سلسلہ جاری ہے۔تاہم اسپیکر پنجاب اسمبلی نے ن لیگی اراکین کے استعفے منظور نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اسپیکر پنجاب اسمبلی کو 6 ماہ تک استعفے منظور نہ کرنے کا اختیار حاصل ہے ۔اسپیکر 6 ماہ کے دوران مستعفی ہونے والے رکن کو طلب کرسکتے ہیں جبکہ ارکان مستعفی ہونے کی وجوہات بیان کرنے کے پابند ہیں۔
پوچھا جائے گا کہ وہ ذاتی خواہش یا کسی کے دباؤ پراستعفیٰ تو نہیں دے رہا۔اسپیکر جب تک استعفے الیکشن کمیشن کو نہیں بھجواتے رکن مستعفی تصور نہیں کیا جائے گا۔اس پر الیکشن کمیشن کو بھجوا نے کے بعد نئے الیکشن کے شیڈول کا اعلان ہوگا۔ترجمان اسپیکر آفس کا کہنا ہے کہ اسپیکر کو ابھی تک کسی بھی رکن کی جانب سے استعفیٰ نہیں ملا۔
اسی حوالے سے تر جمان پنجاب حکومت، چیئر مین لاہور ٹرانسپور ٹ کمپنی ڈاکٹر شاہد صد یق نے کہا ہے کہ استعفوں کی دھمکی خود پی ڈی ایم کو مہنگی پڑے گی،اپوز یش جماعتو ں کی لیڈز شپ اپنی سیا ست اور ان کے ممبر اپنی اسمبلی رکنیت بچانے کی جنگ لڑ رہے ہیں، ضمنی انتخابا ت کی صور ت میں اپوز یشن کی سیا ست کا ملک سے مکمل خا تمہ ہو جائیگا ۔

اپنے جاری بیان میں انہو ں نے کہاکہ اپوزیشن جماعتوں کی لیڈر شپ زبرد ستی ممبران اسمبلی سے استعفیٰ ما نگ رہی ہے جبکہ ممبران پارلیمنٹ کسی صور ت استعفیٰ دینے کو تیار نہیں ہے اب اپوز یشن جماعتو ں کی لیڈر شپ ایک نئے امتحان سے گزررہی ہے مگر اسے سمجھ نہیں آ رہی ہے کہ محاذ آرائی سے کو ئی فا ئدہ نہیں ہو گا حکومت گیرانا بچو ں کا کام نہیں اپوز یشن جماعتیں ہر رو ز جلسے بھی کر لیں ان شا ء اللہ حکومت اپنی آئینی مد ت پوری کرے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں