38

حکومت اپوزیشن کے ساتھ تمام سیاسی معاملات پرامن مذاکرات کے ذریعہ حل کرے گی، عثمان ڈار

اسلام آباد :وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے امور نوجوانان ، عثمان ڈار نے کہا ہے کہ اپوزیشن کے ساتھ کوئی ڈیڈ لاک نہیں مگر پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ملک کے وسیع ترمفاد میں حزب اختلاف کے ساتھ تمام سیاسی معاملات مذاکرات کے ذریعہ حل کرنے کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں جمیعت علمائے اسلام کے سربراہ مولانافضل الرحمن اور دیگر اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ تمام ملکی امورپرامن مذاکرات کے ذریعے حل کرنا چاہتی ہے۔

انہوں نے امید ظاہر کی کہ حکومت اور اپوزیشن کے مابین بات چیت جاری رہے گی کیونکہ یہ جمہوریت کا حسن ہے انہوں نے کہا کہ دونوں فریقین کے مابین سیاسی اختلافات مذاکرات کے ذریعے حل ہوجا ئیں گے ،حکومت ملک کی سیاسی صورتحال کو معمول پر لانے کی پوری کوشش کر رہی ہے اور حزب اختلاف نے الیکشن کمشن آف پاکستان( ای سی پی) اور دیگر ریاستی امور کے معاملات پر باضابطہ طور پر حکومت سے بات چیت کا آغاز کیا اور امید ہے کہ آنے والے دنوں میں سب معاملات مذاکرات کے ذریعے حل ہوجائیں گے ۔

سابق صدر زرداری کی صحت کے بارے میں انہوں نے کہا کہ قانون کی نظر میںسب برابرہیں اور کوئی بھی اس سے بالاتر نہیں ہے۔پاکستان تحریک انصاف کا حکومتی مشن اس وقت تک کامیاب نہیں ہوگا جب تک کہ ہمارے پاس ہر ایک کے لئے ایک جیسا قانون نہ ہو عثمان ڈار نے مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کے رہنماؤں پر بھی تنقید کی۔ انہوں نے کہا جب ہم ان کی صحت کے بارے میں بات کرتے ہیں تو وہ بلیک میلنگ کے حربے استعمال کرتے ہوئے بیرون ملک علاج کرانے کی اجازت کا رونا روتے ہیں،ناگرسابق صدر زرداری کو عدالت کی طرف سے علاج کے لئے بیرون ملک جانے اجازت مل جاتی ہے تو ہم مداخلت نہیں کریں گے۔

عثمان ڈار نے کہا کہ حکومت حزب اختلاف کے کسی بھی غیر آئینی اور غیر جمہوری مطالبات کو قبول نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا ہمیں ایک پرامن اور خوشحال پاکستان کے لئے مل کر کام کرنا ہوگااورکسی بھی قیمت پر قومی مفاد پر سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں