ispr 315

فخر ہے بیٹے نے ملک پر جان قربان کی، والدہ شہید لیفٹیننٹ ناصر خالد

ARMY
مظفر آباد ءلیفٹیننٹ ناصر خالد نے 3 ستمبر کو وزیرستان میں دہشت گردوں کے آئی ای ڈی حملے میں ساتھیوں سمیت جام شہادت نوش کیا تھا۔مظفر آباد میں پاک فوج کے شہید لیفٹیننٹ ناصر خالد کو فوجی اعزاز کے ساتھ سپرد خاک کردیا گیا۔ شہید لیفٹیننٹ ناصر خالد کی نماز جنازہ میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔شہید کو شاناڑا کے قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا، شہید کی قبر پر پاک فوج کے چاق و چوبند دستے نے سلامی پیش کی۔
وزیراعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے وزیر ستان میں شہید ہونیوالے لیفٹیننٹ ناصر خالد کی نماز جنازہ میں شرکت کی اور شہید کو خراج عقیدت پیش کیا۔ نماز جنازہ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم آزادجموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہاکہ شہید ناصر خالدآزادکشمیر کا قابل فخر سپوت تھا جس نے اپنی جان وطن عزیز پر قربان کر دی۔

شہید ناصر خالد کی والدہ کا کہنا ہے کہ مجھے فخر ہے کہ میرے بیٹے نے ملک پر اپنی جان قربان کر دی۔میرا دوسرا بیٹا بھی آرمی میں ہے۔شہید کی بہادر والدہ کا مزید کہنا تھا کہ پچاس بیٹے بھی ہوتے تو ملک پہ قربان کر دیتی۔
۔یاد رہے کہ خیبر پختونخوا کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں پاک فوج کے قافلے کے قریب آئی ای ڈی دھماکے میں ایک افسر سمیت 3 اہلکار شہید ہو گئے تھے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق شمالی وزیرستان میں شگانشپا روڈ پر گھیریوم سیکٹر میں سڑک کی مرمت کرنیوالی ٹیم کی حفاظت پر مامور پاک فوج کے دستے کے قریب دہشت گردوں کی جانب سے ریموٹ کنٹرول دھماکا کیا گیا۔دھماکے میں 23 سالہ لیفٹیننٹ ناصر حسین خالد، 33 سالہ نائیک محمد عمران اور 30 سالہ سپاہی عثمان اختر نے جام شہادت نوش کیا۔
اس کے علاوہ اس حملے میں 4 فوجی زخمی بھی ہوئے۔دھماکے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا گیا تھا۔یاد رہے کہ 8 مئی کو بھی میرانشاہ کے علاقے میں ہی ایک سکیورٹی چیک پوسٹ پر راکٹ حملے میں پاک فوج کے 2 اہلکار شہید ہوگئے تھے۔اس سے قبل اپریل میں ضلع شمالی وزیرستان میں عسکریت پسندوں کے حملوں میں بھی 10 سکیورٹی اہلکار شہید اور 6 زخمی ہوئے تھے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں