58

میری پوری توجہ معیشت مستحکم کرنے پر ہے، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ میری پوری توجہ معیشت مستحکم کرنے پر ہے اور ہماری حکومت نے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر قابو پا لیا ہے۔

اسلام آباد میں ڈیجیٹل پاکستان ویژن کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ عمر کا زیادہ تر حصہ بیرون ملک گزارا اس لیے اوورسیز پاکستانیوں کی مشکلات کا اندازہ ہے، کئی لوگ پاکستان آئے، مشکلات ہوئیں تو واپس چلے گئے لیکن میں انہیں بتانا چاہتا ہوں کہ کسی پیغمبرکی زندگی آسان نہیں تھی اور چھوٹے فیصلے کرنے والا خودغرض ہوتا ہے، بڑے فیصلوں میں رسک ہوتا ہے لیکن جولوگ زندگی میں اوپرپہنچے انھوں نے بڑے فیصلے کیے۔

وزیراعظم نے کہا کہ کرپشن ہمیشہ اوپر سے شروع ہوتی ہے اور جن سے کرپشن شروع ہوئی وہ تو باہر چلے گئے ہیں، ای گورننس کرپشن ختم کرنے کا بہترین طریقہ اور ہمارے لیے بہت ضروری ہے، ڈیجیٹلائزیشن سے عام آدمی کی زندگی میں آسانی آئے گی، ای گورننس کرپشن ختم کرنے کا بہترین طریقہ ہے، سرکاری محکموں میں بھی ای گورننس سسٹم لارہے ہیں لیکن مزاحمت کا سامنا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میری پوری توجہ معیشت مستحکم کرنے پر ہے اور ہماری حکومت نے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر قابو پالیا ہے لیکن جب حکومت ملی تو کوئی ادارہ ایسا نہیں تھا جو خسارے میں نہیں تھا اور آپ پانچ سال مجھ سے یہ سنتے رہیں گے کہ ہمیں کتنا خسارہ ملا، خسارے کا دباؤ روپے پرآتا ہے اور جب تک روپیہ مستحکم نہیں ہوتا، سرمایہ کاری بھی نہیں آتی، باہرکی ایجنسیزجب کہتی ہیں کہ معیشت مستحکم ہوگئی ہےتواعتماد ملتا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ قوم سے پہلے خطاب میں کہا آپ نے گھبرانا نہیں ہے لیکن اس کے باوجود کچھ لوگ گھبرا گئے اور ابھی بھی گھبرائے ہوئے ہیں، ایک بارپھر کہتا ہوں ملکی معیشت درست کام کررہی ،آپ نے گھبرانا نہیں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امہ کو اکٹھا کرنے میں کردار ادا کریں گے اور اپنی پوری صلاحیتیں بروئےکارلائیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں