114

والدہ ہمیں کہتی کہ بچو آج تھوڑا کم کھانا کہ تمہارے ابا نے بھی روٹی کھانی ہے،جبکہ کھانے کے ٹائم پر ابا جی کہتے کہ میں تو آج باہر سے کھانا کھا کر آیا ہوں غربت اتنی زیادہ تھی کہ کپڑے نہیں ہوتے تھے اور ننگے پاؤں کرکٹ کھیلا کرتا تھا،مشتاق احمد کی ویڈیو وائرل

والدہ ہمیں کہتی کہ بچو آج تھوڑا کم کھانا کہ تمہارے ابا نے بھی روٹی کھانی ہے،جبکہ کھانے کے ٹائم پر ابا جی کہتے کہ میں تو آج باہر سے کھانا کھا کر آیا ہوں
غربت اتنی زیادہ تھی کہ کپڑے نہیں ہوتے تھے اور ننگے پاؤں کرکٹ کھیلا کرتا تھا،مشتاق احمد کی ویڈیو وائرل

پاکستانی بلے باز مشتاق احمد کے نام سے کون واقف نہیں انہوں نے ہمیشہ اپنے چاہنے والوں کے دل جیتے ہیں،آج کل ان کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہے جس میں انہوں نے سننے والوں کے دل جیت لیے ہیں۔مشتاق احمد نے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ ”میرا باپ مجھے بہت یاد آتا ہے۔پتا ہے کیوں کیونکہ ہم غریب لوگ تھے،میرا والد مزدوری کرتا تھااور روز کے سو روپے کما کر لاتا تھا۔
ہم آٹھ بہن بھائی کھانے والے تھے۔مجھے کرکٹ کھیلنے کا بہت شوق تھا۔میرے پاس کٹ بھی نہیں تھی اور جوگر لینے کے پیسے بھی نہیں تھے ا س لیے میں اکثر ننگے پاؤں کرکٹ کھیلا کرتا تھا۔جب میرے والد نے میرا یہ حال دیکھا اور میرا شوق دیکھا تو انہوں نے اپنا پیٹ کاٹ کر پیسے جوڑ کر مجھے نئے کپڑے لے کر دیے،ٹراؤزر لے کر دیا،بلااور جوگر بھی لے کر دیے تاکہ میں اپنا شوق پورا کر سکوں۔
میں اکثر انہیں چھپ چھپ کر دیکھا کرتا تھا کی وہ کیسے مزدوری کیا کرتے تھے۔میرے والد ساہیول غلہ منڈی میں مزدوری کرتے تھے۔مجھے اچھی طرح سے یاد ہے کہ والدہ ہمیں کہتی کہ بچو آج تھوڑا کم کھانا کھانا کہ تمہارے ابا نے بھی روٹی کھانی ہے۔جبکہ کھانے کے ٹائم پر ابا جی کہتے کہ میں تو آج باہر سے کھانا کھا کر آیا ہوں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں