135

پاکستان نے انڈیا کو شکست دے کر کبڈی ورلڈکپ پہلی مرتبہ اپنے نام کر لیا

لاہور کے پنجاب سٹیڈیم میں ہونے والے کبڈی ورلڈکپ 2020 کے فائنل میں پاکستان نے انڈیا کو 41 کے مقابلے میں 43 پوائنٹس سے شکست دے کر کبڈی کا ورلڈکپ پہلی مرتبہ اپنے نام کر لیا ہے۔

مقابلے میں انڈیا کو آغاز سے ہی برتری حاصل رہی جو دوسرے ہالف کے وسط تک برقرار رہی تاہم پاکستان کی ٹیم کی جانب سے عمدہ کھیل پیش کیا گیا اور دیکھتے ہی دیکھتے بازی پلٹ گئی۔

ایک موقع پر میچ ختم ہونے میں صرف 10 منٹ باقی تھے اور انڈیا کو پاکستان پر 30 کے مقابلے میں 32 پوائنٹس کی برتری حاصل تھی تاہم پاکستانی کھلاڑیوں کی جانب سے لگائے جانے والے پھرتیلے داؤ کارگر ثابت ہوئے اور ایک انتہائی سنسی خیز مقابلے کے بعد پاکستان نے انڈیا کو 41 کے مقابلے 43 پوائنٹس سے شکست دے کر ٹائٹل اپنے نام کر لیا۔

کبڈی کا یہ فائنل مقابلہ کئی مرتبہ تاخیر کا شکار ہوا۔ اس کی وجہ امپائرز کی جانب سے دیے جانے والے چند فیصلے تھے جن کو کبھی انڈیا اور کبھی پاکستان کی ٹیموں کی جانب سے چیلنج کیا گیا۔

تاہم ویڈیو ریویو سسٹم کی موجودگی میں ان فیصلوں کا بغور جائزہ لیا گیا اور اس طرح کئی منٹ کے تعطل کے بعد میچ دوبارہ شروع کیا جا سکا۔پاکستان کے کپتان محمد عرفان عرف منا جٹ نے پہلے ہالف میں عمدہ کھیل پیش کرتے ہوئے پاکستان کو میچ میں رکھا۔

جس کے بعد پورے ٹورنامنٹ میں خاطر خواہ کارکردگی نہ دکھانے والے شفیق چشتی نے اپنے داؤ دکھانے شروع کیے اور ایک کے بعد ایک پوائنٹ لے کر انڈیا کی برتری کم کرتے گئے۔

پاکستان کی جانب سے ملک بنیامین اور مشرف جنجوعہ نے بھی عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے جیتنے کا یہ سنہری موقع ہاتھ سے نہ جانے دیا اور پاکستان کو فتح سے ہمکنار کیا۔

کبڈی ورلڈکپ پہلی مرتبہ پاکستان کے نام
گذشتہ روز سیمی فائنل مقابلوں میں پاکستان نے ایران جبکہ انڈیا نے آسٹریلیا کو شکست دے کر فائنل تک رسائی حاصل کی تھی۔

کبڈی کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ورلڈ کپ بھارت سے باہر پاکستان میں ہوا جہاں آسٹریلیا، امریکا اور ایران سمیت دنیا بھر سے ٹیمیں آئیں اور پنجاب کے مختلف شہروں میں میچز منعقد ہوئے۔

لاہور میں 9 فروری تقریب کو کبڈی ورلڈ کپ کا آغاز ہو گیا تھا اور پاکستان نے اس سے قبل کینیڈا، سیئرا لیون، آذر بائیجان اور آسٹریلیا کو شکست دی تھی۔کبڈی ورلڈ کپ کی تاریخ میں ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ اس کی میزبانی بھارت کے علاوہ کسی ملک کے پاس آئی ہے۔

اتفاق سے یہ بھی پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ بھارت اپنے اعزاز کا دفاع کرنے میں ناکام رہا ہے۔ پاکستان کو بھارت کے خلاف یہ فتح مسلسل چار مرتبہ اس سے شکست کھانے کے بعد ملی ہے۔

یہ ورلڈ کپ لاہور کے علاوہ گجرات اور فیصل آباد میں بھی منعقد ہوا جس میں انڈیا، سیئیرا لیون، انگلینڈ، آسٹریلیا، جرمنی، ایران، کینیا، کینیڈا اور آذربائیجان کی ٹیمیں شامل تھیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں