PDM 37

پی ڈی ایم نے31 جنوری تک حکومت مستعفی ہونے کی ڈیڈلائن دے دی

لاہور : پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے 31 جنوری تک حکومت مستعفی ہونے کی ڈیڈلائن دے دی، صدر پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اگر حکومت مستعفی نہ ہوئی توپھریکم فروری کو اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کا اعلان کیا جائے گا،31 دسمبر تک پی ڈی ایم کے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی اپنے استعفے پارٹی قائدین کوجمع کروادیں گے۔

تفصیلات کے مطابق صدر پی ڈی ایم نے مریم نوازاور بلاول بھٹو ودیگر رہنماؤں کے ہمراہ پی ڈی ایم اجلاس کے بعد مشترکہ میڈیا بریفنگ میں کہا کہ پہلی بات یہ ہے کہ 31 دسمبر تک پی ڈی ایم کے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی اپنے استعفے اپنی اپنی جماعت کے قائدین کو پیش کردیں گے۔ حکومت کو واضح کردینا چاہتے ہیں 31 جنوری تک حکومت مستعفی ہوجائے، اگر مستعفی نہیں ہوئی تو پھر سربراہی اجلاس میں یکم فروری کو اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کا اعلان کردے گا۔

پی ڈی ایم جماعتوں سے اپیل کی جارہی ہے کہ وہ لانگ مارچ کی تیاری شروع کردیں۔ انہوں نے کہا کہ کل فقیدالمثال جلسہ مینارپاکستان میں منعقد ہوا، جہاں سیاسی مقاصد کا اعلان کیا گیا، انہی مقاصد کے تسلسل کیلئے پی ڈی ایم سربراہان نے متفقہ اعلامیے پر بھی دستخط کیے ہیں۔پی ڈی ایم کی اسٹیئرنگ کمیٹی نے صوبوں کو لانگ مارچ کی تیاریوں کا جو شیڈول دیا وہ برقرار رہے گا۔

مرکزی عہدیدران اورمرکزی کمیٹی اور اسٹیئرنگ کمیٹی کے اراکین جن صوبوں سے تعلق رکھتے ہیں، وہ اپنے اپنے صوبے میں میزبان کمیٹی ہوں گے۔ اور اپنے صوبوں کے سربراہان، ذمہ دران پی ڈی ایم جماعتوں کے اجلاس منعقد کرکے تیاریوں کی نگرانی کریں گے۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اجلاس میں اس بات پر ناراضگی کا اظہار اور شدید مذمت کی گئی کہ آئی ایس پی آر نے جس طرح الیکٹرانک میڈیا کے چینلز پر جلسے کے خلاف منفی پروپیگنڈے کے ذریعے دباؤ ڈالا، ہم سمجھتے ہیں ہم میڈیا کی آزادی کی جنگ میں ساتھ ہیں، لیکن حکمران میڈیا کو جانبدار اور گھر کی لونڈی بنانا چاہتے ہیں۔ قومی سطح کے ایونٹ کو تاریخ 1940ء کے اجتماع کی طرح یاد کرے گی۔ لیکن اس منفی انداز میں پیش کیا جانا گھٹیا انداز ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں