23

کاروباری روز کے اختتام پر ڈالر مزید مہنگا ہوگیا، امریکی کرنسی کی قیمت میں 5 ماہ کے دوران سب سے بڑا اضافہ ریکارڈ

کاروباری روز کے اختتام پر ڈالر مزید مہنگا ہوگیا، امریکی کرنسی کی قیمت میں 5 ماہ کے دوران سب سے بڑا اضافہ ریکارڈ

کراچی : کاروباری روز کے اختتام پر ڈالر مزید مہنگا ہوگیا، امریکی کرنسی کی قیمت میں 5 ماہ کے دوران سب سے بڑا اضافہ ریکارڈ، انٹربینک میں امریکی کرنسی کی قیمت 160 روپے کی سطح عبور کر گئی، جبکہ اوپن مارکیٹ میں قیمت 159روپے90پیسے ہوگئی۔ تفصیلات کے مطابق بدھ کے روز پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قیمت میں غیر متوقع اور یکدم بہت بڑا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
مقامی کرنسی مارکیٹوں میں امریکی ڈالر سمیت دیگر غیر ملکی کرنسیوں کے مقابلے میں پاکستانی روپے پر شدید دباو بڑھا۔ بتایا گیا ہے کہ مسلسل کئی روز سے تنزلی کا شکار امریکی ڈالر صرف ایک دن کے دوران تقریباً 2 روپے تک مہنگا ہوگیا، پاکستانی روپے کی قدرمیں بہتری کا سلسلہ رک گیا۔
ملکی کرنسی مارکیٹ میں 5 ماہ کے دوران امریکی ڈالر کی قیمت میں سب سے بڑا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

اوپن مارکیٹ میں ڈالر 159.90روپے اور انٹر بینک مارکیٹ میں 160.20روپے کی سطح پر پہنچ گیا۔ فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے مطابق بدھ کے روز اوپن مارکیٹ میں امریکی ڈالرکی قدر میں1.44روپے کا نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں ڈالر کی قیمت خرید158.25روپے سے بڑھ کر159.70روپے اور قیمت فروخت158.45روپے سے بڑھ کر159.90روپے ہوگئی ۔ دوسری جانب انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی بھی1.80روپے کا اضافہ ہوا جس کے باعث ڈالر کی قیمت خرید158روپے سے بڑھ کر159.80روپے اور قیمت فروخت158.30روپے سے بڑھ کر 160.20 روپے ہوگئی۔
ڈالر کی قیمت میں اضافے کے حوالے سے ایکسچینج کمپنیر ایسوسی ایشن آف پاکستان کے جنرل سیکرٹری ظفر پراچہ کا کہنا ہے کہ روپے کی قدر میں کمی کو تیل کی مد میں ادائیگیوں اور کچھ درآمدات سے بھی جوڑا جاسکتا ہے۔ یہ اتار چڑھاﺅ عارضی ہے اور اگلے چند دنوں میں روپے کی قدر میں بہتری ہوگی۔ معاشی ماہرین کے مطابق رواں سال کے اختتام پر ڈالر کی قیمت 161 روپے کے آس پاس رہے گی۔ دوسری جانب اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا کہنا ہے کہ فوری کوششوں کےبعدمعیشت کورونا آمد کے موقع پر مستحکم ہوچکی ہے، کورونا کے باوجود زرمبادلہ ذخائر میں7ارب ڈالر اضافہ ہوا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں