119

کوروناوائرس کی وجہ سے پاکستان میں 1 کروڑ85 لاکھ لوگ ہوں گے بے روزگار

اسلام آباد: پاکستان میں کورونا وائرس (Pakistan) کی وجہ سے آنے والے وقت میں بے روزگاری کا بحران پیدا ہوگا۔ یہ بات ایک رپورٹ کے حوالے سے کہی گئی ہے۔ معاشی ماہرین نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے لوگ بے روزگار ہو رہے ہیں اور پاکستان میں ایکسپورٹ کو نقصان ہورہا ہے۔

پاکستان کی وزارت منصوبہ بندی سے وابستہ ایک تحقیقی ادارہ ، پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف ڈیولپمنٹ اکنامکس کے تین محققین کی مرتب کردہ ایک خصوصی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے عائد پابندی کی وجہ سے اقتصادی مندی اور بے روزگاری شروعات میں تین مرحلوں میں اثر کرے گی۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اس بحران کے نتیجے میں سب سے زیادہ اثر خوردہ کاروبار (Retail business) پر ہوگا۔

خوردہ کاروبار میں زیادہ تر نوکریاں ختم کر دی جائے گی۔ وہیں زراعٹ، پیداوار، ہوٹل اور ریستورینٹ، ماہی گیری اور روز مرہ کی بنیاد پر کام کرنے والے یا ٹھیلے لگانے والے بری طرح متاثر ہوں گے۔ سینئر محققین محمود خالد نے ‘اردو نیوز’ کو بتایا کہ پاکستان حکومت کیلئے اس بحران سے نمٹنا ایک مشکل کام ہے۔ کیونکہ اگر حکومت کورونا وائرس(Coronavirus ) کے اثر کو روکنے کیلئے لاک ڈاؤن (Lockdown) نہیں کرتی ہے تو کورونا وائرس سے متاثر مریضوں کا زیادہ بوجھ ہیلتھ سیکٹر پر پڑے گا جو فی الحال اس کو سہنے سے قاصر ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں