america 75

کورونا وائرس پھیلنے کا خطرہ ، امریکہ میں پاکستانی سفارتخانہ بند کردیا گیا

واشنگٹن : عالمی وباء کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشات کے باعث واشنگٹن میں پاکستانی سفارتخانہ بند کردیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق اس ضمن میں ترجمان پاکستان ایمبیسی کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ کورونا کیسز کے ممکنہ پھیلاؤ کے خطرات کی وجہ سے واشنگٹن میں پاکستانی سفارتخانے کو بند کیا گیا ہے ، ابتدائی طور پر یہ بندش آئندہ 3 روز تک کے لیے ہے جس کے باعث سفارتخانہ 4 سے 6 جنوری تک بند رہے گا ، اس دوران قونصلر سروسز بھی بند رہیں گی تاہم ویزہ یا پاسپورٹ کے لیے آن لائن سروس کی سہولت دستیاب رہے گی۔
ترجمان کے مطابق بندش کے دوران سفارتخانے کے تمام عملے کا کورونا ٹیسٹ کروایا جائے گا جب کہ سفارتخانہ کو جراثیم کش سپرے کرنے کے بعد ایک بار پھر کھول دیا جائے گا۔
دوسری طرف امریکہ میں عالمی وباء کی ویکسین لگوانے کے باوجود نرس کا کورونا ٹیسٹ مثبت آگیا ، کیلی فورنیا میں نرس نے فائزر کی ویکسین لگوائی تاہم اس کے باوجود وہ ایک ہفتے بعد کورونا وائرس کا شکار ہوگئیں۔

غیرملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 45 سالہ نرس میتھیو ڈبلیو امریکا کے دو مختلف مقامی ہسپتالوں میں خدمات سر انجام دے رہی ہیں ، جہاں کرسمس سے صرف 6 روز قبل وہ کورونا یونٹ میں مسلسل کام کرنے کی وجہ سے بیمار ہوگئیں ، جس کے باعث خاتون نرس کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ کروایا گیا جو کہ مثبت آگیا۔ بتایا گیا ہے کہ خاتون نے اپنی ایک فیس بک پوسٹ میں لکھا کہ انہیں عالمی وباء کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے فائزر کی ویکسین لگائی گئی تھی ویکسی نیشن کے بعد ان کا بازو بھی سوجن کا شکار ہو گیا تھا تاہم انہیں کوئی سائیڈ ایفیکٹ نہیں ہوا۔

بتاتے چلیں کہ امریکہ میں شہریوں کو عالمی وباء کورونا وائرس بچاو کی ویکسین دینے کا آغاز چند روز قبل کیا گیا ، اور امریکہ میں پہلی کورونا ویکسین نیویارک میں ایک ہیلتھ ورکرکو دی گئی ، جس کے ساتھ ہی امریکا میں فائزر کی کورونا ویکسین لگانے کا آغاز ہوگیا ، امریکی طبی ادارے ایف ڈی اے کی طرف سے گزشتہ ہفتے فائزر کی کورونا ویکسین کے ایمرجنسی استعمال کی منظوری دی گئی تھی ، اس کے ساتھ ساتھ امریکا کی جانب ماڈرنا کی کورونا ویکسین کے بھی 200 ملین خوراکوں کے آرڈر بھی دے دیے گئے ہیں جن میں سے امکان ہے کہ 100 ملین خوراکیں رواں ماہ ہی فراہم کردی جائیں گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں