37

گھروں میں کام کرنیوالی خاتون کو بھارت بھر سے نوکری کی پیشکش

دنیا بھر میں اکثر گھر میں کام کاج کرانے یا کاموں میں مدد کیلئے کام والوں کو رکھتے ہیں آپ نے شاید ہی کبھی ایسا سنا ہو کہ کام کرنے والی ماسیاں اپنا بزنس کارڈ بھی رکھتی ہیں؟

ایسے ہی خبر سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی ہے، جسے ہر کوئی پڑھ کر داد دے رہا ہے، بھارتی شہر پونے کی گھریلو کام کاج میں مدد کرنے والی گیتا کلے کو ہندوستان کے کونے کونے سے نوکری کی پیشکش ہو رہی ہیں، گیتا کو بے شمار نوکریوں کی پیشکش کی وجہ بزنس کارڈ ہے جو کہ دھناشری شندے نامی خاتون نے تیار کر کے دیا تھا جو کہ سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہو گیا ہے۔

گیتا کلے اور دھناشری شندے کی ناقابل یقین کہانی اسمیتا جاوڈیکر نامی صارف نے فیس بک پر شیئر کی تھی جس کے بعد یہ کہانی اور بزنس کارڈ وائرل ہو گیا۔

اسمیتا نے فیس بک کے اکاؤنٹ پر لکھا کہ دھناشری ایک دن آفس سے اپنے گھر آئی جہاں انہوں نے دیکھا کہ گیتا جو کہ ان کے گھر میں کام کرتی تھی، وہ مایوس بیٹھی تھی کیونکہ اسے کسی نے اپنے گھر سے کام کاج کرنے کے لیے ہٹا دیا تھا اور وہ وہاں سے ماہانا 4000 کما رہی تھی۔

دھناشری جو کہ ولاس جاوڈیکر ڈیولوپرز میں سینئر مینیجر ہیں انہوں نے یہ سوچا کہ کیوں نہ گیتا کے لیے ایک بزنس کارڈ بنایا جائے، انہوں نے فوراً ہی اپنی سوچ پر عمل کرتے ہوئے گیتا کے لیے ایک بزنس کارڈ تیار کیا اور اس کارڈ کے 100 پرنٹ نکلوائے۔

اسمیتا نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر اس کہانی کے ساتھ گیتا کے بزنس کارڈ کی تصویر بھی شیئر کی جس میں کام والی کا نام، کام کی تفصیلات اور ماہانا معاوضے کے حوالے سے تمام تر تفصیلات بھی درج تھیں۔

اسمیتا کی سوسائٹی کے چوکیدار نے ان کے پڑوس میں یہ کاروباری کارڈ دیا اور ان کا کہنا تھا یہ بظاہر چھوٹا سا قدم ہے لیکن اس کا رد عمل ناقابل تصور تھا۔

انہوں نے پوسٹ میں لکھا کہ بزنس کارڈ راتوں رات انٹرنیٹ پر وائرل ہو گیا اور گیتا کالے کا کارڈ وائرل ہونے کے بعد سے ہی ہندوستان کے کونے کونے سے انہیں بے شمارنوکریوں کی پیشکش کی جا رہی ہیں۔

فیس بک پر دھناشریاور گیتا کلے کی کہانی پر اب تک 1600 سے زائد لائیکس آچکے ہیں اور اس پوسٹ پر سیکڑوں لوگوں نے کمنٹس بھی کیے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں