موجودہ حکومت صرف جھوٹے وعدوں تک محدود ہے، خورشید شاہ

سکھر: پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ پیپلزپاٹی کی حکومت نے صوبوں کو بااختیار بنایا، 18 ویں ترمیم لائی، روزگار دیا، سستی بجلی دی اور سستا تیل دیا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ہماری حکومت کو بھی کہا گیا تھا کہ آٹا، گھی، تیل، بجلی اور چینی مہنگی کرو لیکن ہم نے انکار کردیا تھا۔

ٹی وی ٹوڈےنیوز کے مطابق سکھر پریس کلب کے سامنے مہنگائی کے خلاف منعقدہ احتجاجی دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے رکن قومی اسمبلی سید خورشید شاہ نے کہا کہ ہم نے کوڑے کھائے، جیلیں دیکھیں اور ہمارے لیڈروں نے عوام کے حقوق کی خاطر جانوں کی قربانی بھی دی لیکن کوئی فکر یا پرواہ نہیں کی۔

پی ٹی آئی حکومت پر کڑی نکتہ چینی کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر سید خورشید شاہ نے کہا کہ کہتا تھا کہ ڈالر سستا کروں گا، پیٹرول سستا دوں اور آٹا سستا دوں گا تو کیا اس نے یہ کیا؟ انہوں نے استفسار کیا کہ ایک کروڑ نوکریاں اور گھر کہاں گئے؟

پی پی رہنما سید خورشید شاہ نے کہا کہ آج صورتحال یہ ہے کہ مائیں اور بہنیں دروازوں کی طرف دیکھ رہی ہیں کہ کوئی کھانا دے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت صرف جھوٹے وعدوں تک محدود ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے لوگوں کو گرفتار نہیں کروایا۔ انہوں نے چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ کوئی ہے جو ہم سے 2008 سے 2013 تک کا حساب مانگے؟
ٹی وی ٹوڈے نیوز کے مطابق مہنگائی کے خلاف پی پی کے زیر اہتمام منعقدہ دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ آج یہ تمام کارکنان و عوام تاریخی مہنگائی کے خلاف نکلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ نا اہل حکومت کے خلاف ریفرنڈم ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت کو گھر جانا چاہیے۔

وزیر اعلی سندھ کے معاون خصوصی ارسلان اسلام شیخ نے اس موقع پر ٹی وی ٹوڈے نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پی پی کے ریر اہتمام منعقدہ ریلی اور احتجاج مہنگائی کے خلاف نہیں بلکہ پاکستان کی بقا کی خاطر ہے۔

ارسلان اسلام شیخ نے اعلان کیا کہ جب تک نااہل عمران خان استعفیٰ نہیں دیں گے اس وقت تک احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔

احتجاجی دھرنے و مظاہرے میں شریک کارکنان نے اس موقع پر موجودہ حکومت اور مہنگائی کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں