لوک گلوکارہ ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے آٹھ برس بیت گئے

لاہور (ٹی وی ٹوڈے نیوز) درد بھری آواز اور منفرد انداز کی گلوکارہ ریشماں کو مداحوں سے بچھڑے آٹھ برس بیت گئے۔

کوئی نہیں جانتا تھا کہ 1947ء میں بھارتی راجھستان کے خانہ بدوش گھرانے میں جنم لینے والی ریشماں ایک دن سروں کی بے تاج ملکہ بنے گی۔ حضرت لعل شہباز قلندرؒ کی درگاہ پر جب اس منفرد آواز کی گائکہ کو دریافت کیا گیا تو ان کی عمر محض 12 برس تھی۔

60ء کی دہائی میں ہی ریشماں کی آواز پاکستان سے نکل کر سرحد پار بھی جا پہنچی جہاں انہوں نے فلم” بوبی“کے لیے گانا اکھیاں نو رہن دے گایا اور شہرت کی بلندیوں کو چھو لیا۔ بھارتی فلم ہیرو کے لیے گائے گانے لمبی جدائی نے تو مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کر دیئے۔

حکومتِ پاکستان نے ریشماں کی خدمات کے اعتراف میں انہیں ستارۂ امتیاز سے نوازا۔ 1980ء میں ریشماں کو گلے کا سرطان لاحق ہو گیا جو بالآخر 3 نومبر 2013ء کو لاہور میں صحرا کی اس آواز کو ہمیشہ کے لیے خاموش کر گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں