بھارت: ایک سال کے دوران 12 ہزار سے زائد طالبعلموں کی خود کشیاں

نئی دہلی: بھارت میں مودی کے دور حکومت کے صرف ایک سال کے دوران 12 ہزار سے زائد طالبعلموں نے خود کشی کے ذریعے اپنی زندگیوں کا خاتمہ کیا ہے۔

بھارت کے مؤقر انگریزی اخبار انڈیا ٹائمز کے مطابق بھارت میں گزشتہ 26 سالوں کے دوران ایک لاکھ 80 ہزار سے زائد طلبہ نے خود کشیاں کی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق بھارت میں طالبعلموں کی خود کشی کے رحجان میں 21 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق بھارت میں کورونا وائرس کی وبا کی شدت کے دوران یومیہ 34 طالبعلموں نے خود کشی کا ذریعہ اپنی زندگیوں کا خاتمہ کیا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق 1995 سے اب تک 1 لاکھ 80 ہزار سے زائد طالب علموں نے اپنی زندگیوں کا خاتمہ خود کشیوں کے ذریعے کیا ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق مہارشٹرا، اڑیسہ، تامل ناڈو، جھاڑ کنڈ، کرناٹکا اور مدھیا پردیش کی حکومتوں کے پاس موجود اعداد و شمار اس بات کے غماز ہیں کہ صرف ایک سال کے دوران خود کشیوں میں 53 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

اعداد و شمار کے تحت کہا جا سکتا ہے کہ زیادہ تر یونیورسٹیوں کے طالبعلموں نے خود کشیوں کا راستہ اپنایا لیکن اسکولوں کے طالبعلموں نے بھی اپنی زندگیوں کا خاتمہ خود کشیوں کے ذریعے کیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں