کابل: طالبان نے پاسپورٹ جاری کرنا شروع کر ديئے

کابل: طالبان نے پاسپورٹ جاری کرنا شروع کر دیئے،لاکھوافغان ملک سے نقل مکانی کا ارادہ رکھتے ہیں اور ان کے لئے یہ ایک مثبت پیش رفت ہے۔

افغان طالبان نے بروز ہفتہ اعلان کیا تھا کہ اتوار سے درخواست دہندگان کو پاسپورٹ جاری کرنے کا عمل شروع کر دیا جائے گاخبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اس سے ان شہریوں کو امید ملے گی جو طالبان کی حکومت میں رہتے ہوئے خطرہ محسوس کر رہے ہیں۔

طالبان کی وزارت داخلہ میں پاسپورٹ جاری کرنے والے محکمے کے سربراہ عالم گل حقانی نے بتایا ہے کہ تمام تکنیکی مسائل دور کر دیے گئے ہیں اور اتوار سے ان افراد کے پاسپورٹ کا اجراء شروع ہو جائے گا، جنہوں نے پہلے سے درخواستیں دے رکھی ہیں جبکہ نئی درخواستیں 10 جنوری سے جمع کرائی جا سکتی ہیں-

پاسپورٹ کے اجرا کو طالبان کی جانب سے بین الاقوامی برادری کے ساتھ کیے گئے عہد کے تناظر میں ایک ٹیسٹ کے طور پر دیکھا جا رہا ہے تاکہ بڑھتے ہوئے انسانی بحران کے درمیان اہل افراد کو ملک سے جانے کی اجازت دی جائے-

طالبان اربوں ڈالر کی امداد کی بحالی کے لیے ڈونرز پر دباؤ ڈال رہے ہیں ڈونرز نے مغربی حمایت یافتہ حکومت کے خاتمے کے بعد افغانستان کے لیے امداد روک دی تھی مالی بحران کی وجہ سے کابل میں لوگوں نے اپنا گھریلوں سامان فروخت کرنا شروع کر دیا تھا تاکہ اپنے خاندانوں کا پیٹ پال سکیں۔

واضح رہے کہ طالبان کی طرف سے پندرہ اگست کو کابل پر قبضے کے بعد سے دیگر انتظامی و سیاسی معاملات میں تعطل کی طرح پاسپورٹس کے اجراء کا عمل بھی رک گیا تھا اس وقت ہزاروں افغان شہری کابل کی واحد انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے ذریعے ملک سے نکلنے کی کوشش کر رہے تھے افغانستان پر طالبان کے تیزی سے کنٹرول کے وقت پاسپورٹ کے دفاتر پر رش دیکھا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں