گولڈن ٹیمپل امرتسر میں توہین مذہب کے الزام پر ایک شخص کو مار دیا گیا

سکھوں کے مقدس مقام گولڈن ٹیمپل امرتسر میں توہین مذہب کے الزام پر ایک شخص کو مار دیا گیا۔ واقعہ مذہبی رسومات کی ادائیگی کے دوران پیش آیا۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ واقعہ ہفتہ کی شام پیش آیا جب ایک شخص گولڈن ٹیمپل میں اس مقام میں داخل ہوا جہاں سکھوں کی مقدس کتاب گرو گرنتھ صاحب رکھی گئی ہے۔

میڈیا کے مطابق اس شخص نے کتاب کے ساتھ موجود رسمی تلوار کو چھونے کی کوشش کی مگر اسے سکیورٹی گارڈز اور وہاں موجود دیگر افراد نے روک لیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ جب ان کے اہلکار وہاں پہنچے تو یہ شخص مردہ حالت میں تھا۔ پولیس کے مطابق شخص کے جسم پر تشدد کے مبینہ نشانات موجود تھے۔ 1984 کے بعد یہ پہلا واقعہ ہے جب کسی شخص کو گولڈن ٹیمپل کی حدود میں مارا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں