روسی فوج کا کیف کا محاصرہ، ایئرپورٹ کے کنٹرول کیلئے جنگ جاری

روسی فوج نے یوکرین کے دارالحکومت کیف کا محاصرہ کرلیا، ائیرپورٹ کے کنٹرول کیلئے جنگ جاری ہے۔

کیف میں دھماکوں کی آوازیں سنی جا رہی ہیں، روسی میزائل حملوں سے رہائشی عمارتوں کو بھی نقصان پہنچا۔ یوکرینی حکام نے کیف میں روسی طیارہ مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے، ہلاکتوں کی تعداد 150 کے قریب پہنچ گئی۔

یوکرین کے صدر زیلنسکی کہتے ہیں کئی محاذوں پر روسی افواج کو روک دیا گیا ہے، یوکرین کی مسلح افواج کے سربراہ کی شہریوں سے دشمن کے خلاف لڑنے کی اپیل ہے۔

ادھر صدر زیلنسکی نے یوکرین میں مرد شہریوں کے ملک چھوڑنے پر پابندی کا حکم جاری کر دیا۔ یوکرین کے تمام بالغ مرد شہری مارشل لا کے دوران 90 روز تک ملک سے باہر نہیں جا سکیں گے۔ دارالحکومت کیف میں کرفیو کا اعلان بھی کر دیا گیا۔ روسی حملوں کے بعد یوکرین میں افراتفری مچ گئی۔ کیف شہر خالی ہو گیا، سڑکوں پر گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں، شہریوں کی بڑی تعداد نے سب وے اسٹیشنز پر بستر لگا لئے۔

دوسری طرف یوکرین پر حملے کے خلاف روس کے اندر سے مزاحمت شروع ہو گئی۔ روس کے بڑے شہروں ماسکو اور سینٹ پیٹرز برگ میں شہری سڑکوں پر نکل آئے اور جنگ کے خلاف احتجاج جاری ہے، نعرے بازی کی۔

برطانوی میڈیا کے مطابق سترہ سو سے زائد مظاہرین کو روسی پولیس نے گرفتار کرلیا۔ نوسو سے زائد افراد کو ماسکو میں مظاہرہ کرنے پر گرفتار کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں