قومی اسمبلی کا اجلاس پیر 28 مارچ شام 4 بجے تک ملتوی

اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے اسمبلی کا اجلاس پیر اٹھائیس مارچ تک ملتوی کر دیا۔

اسد قیصر کا کہنا تھا اس ایوان کی روایت رہی ہے کہ کسی بھی ممبر کی وفات کے باعث اجلاس ملتوی کر دیا جاتا ہے۔ سابق ادوار سمیت موجودہ اسمبلی میں بھی پانچ بار اجلاس ملتوی ہونے کی روایت برقرار رہی ہے ۔ لہذا آج قومی اسمبلی کے اجلاس کا ایجنڈا اگلے روز تک بڑھاتے ہوئے اجلاس ملتوی کیا جارہا ہے ۔ البتہ تحریک عدم اعتماد کے معاملے کو آئین و قانون کے مطابق آگے بڑھایا جائے گا۔

قومی اسمبلی اجلاس میں مرحوم خیال زمان کی رحلت، سابق صدر رفیق تارڑ ، سانحہ پشاور سمیت دیگر کے ایصال کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی اور وفاقی وزیر مذہبی پیر نور الحق قادری نے دعا کرائی۔

شیخ رشید کا کہنا تھا تحریک عدم اعتماد قومی اسملبی کے ایجنڈے پر ہے۔ پیر کو عدم اعتماد پیش ہوتی ہے تو 7 دن میں اس پر ووٹنگ ہو گی۔ دیکھنا ہو گا کہ عدم اعتماد ایجنڈے میں کونسے نمبر پر ہے۔ ایجنڈے کے مطابق ہی تحریک عدم اعتماد پیش ہو گی۔ انہوں نے کہا روایت کے تحت قومی اسمبلی کا اجلاس فاتحہ خوانی کے بعد ملتوی کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں