میں کیا جرم کرنے والا تھا کہ رات 12 بجے عدالتیں کھول دی گئیں؟ عمران خان

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میں کیا جرم کرنے والا تھا کہ رات 12 بجے عدالتیں کھول دی گئیں؟

جناح باغ کراچی جلسہ سے سابق وزیراعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا ملک کے منتخب وزیراعظم کو دھمکی دی گئی، دھمکی کے بعد یہاں لوگوں کے ضمیر جاگ گئے، رات کے بارہ بجے عدالتیں کھول دی گئیں، پوچھنا چاہتا ہوں میں نے کیا جرم کرنا تھا جو عدالتیں کھول دیں؟ کبھی عمران خان کا نام میچ فکسنگ میں نہیں آیا، واحد سیاست دان ہوں جسے سپریم کورٹ نے صادق اور امین کہا۔ عدم اعتماد پر پہلے ہی پتہ چل گیا تھا میچ فکس ہو گیا، رات 12 بجے جو عدالتیں کھولیں ساری زندگی دل میں بات رہے گی۔ سپریم کورٹ کو کیا اس مراسلے کو دیکھنا نہیں چاہیے تھا؟

اُن کا کہنا تھا کہ محترم ججز جب کھلی منڈی لگی تھی کیا آپ کو سوموٹو ایکشن نہیں لینا چاہیے تھا، عوام سے کہا کہ آپ نے ان ضمیر فروشوں کو کبھی معاف نہیں کرنا۔ انہوں نے امپورٹڈ حکومت نامنظور کا نعرہ بھی لگوایا۔

اُنہوں نے کہا کہ یہ جو سازش ہوئی، یہ سازش تھی یا مداخلت تھی؟ مسئلہ تحریک انصاف کا نہیں، آپ کے اور آپ کے بچوں کے مستقبل کا ہے۔ کہا کہ بین الاقوامی سطح پر اس ملک کے خلاف سازش ہوئی۔

عمران خان بولے کہ امریکا، بھارت، یورپ سمیت کسی ملک کیخلاف نہیں، کہا کہ امریکا میں سب سے طاقت ورکمیونٹی پاکستان کی ہے، دوستی سب سے چاہتا ہوں، غلامی کسی سے نہیں چاہتا۔ میری جان اتنی ضروری نہیں جتنی اس ملک کو آزادی کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک میر جعفر کو ہمارے اوپر مسلط کردیا، 4 مہینے پہلے پتہ چلا امریکی سفارتخانے میں اپوزیشن کی ملاقاتیں ہوئیں۔ جو ضمیر بیچ کر لوٹا ہوئے ان سے بھی امریکیوں نے ملاقات شروع کردیں۔ ڈونلڈ لو کو پہلے ہی پتہ تھا عدم اعتماد آرہی ہے، ڈونلڈ لو نے عدم اعتماد کی کامیابی کیلئے دھمکی دی۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ انہیں پتہ تھا کس نے آنا ہے، میرجعفر اچکن سلوا کر تیار بیٹھا تھا، میر جعفر جوتے پالش کرنے کا ایکسپرٹ ہے، میر جعفر کی طرح بوٹ پالش نہیں کرسکتا۔ میرجعفر کو آتے ساتھ ہی ڈو مور کا پیغام ملا، ٹرمپ کے دور میں امریکا گیا، شاہد ہی کسی کو اتنی عزت ملی جو مجھے ملی۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے جب الزام لگایا میں نے فوری اسے جواب دیا۔

اُنہوں نے کہا کہ سابق صدر مشرف کو دھمکی ملی، چاروں شانے چت ہو گیا، اپنے لوگوں کو دوسرے ملک کیلئےقربان نہیں کرسکتا، پہلے دن سے مجھ پر این آر او کیلئے دباؤ ڈالا گیا، اللہ سے وعدہ کیا تھا کبھی قوم سے غداری نہیں کروں گا، پہلے دن سے ہی کہا گیا این ار او نہ ملا تو مارچ کریں گے۔ ضمانت پر رہا آدمی وزیراعظم اور اس کا بیٹا وزیراعلیٰ بن گیا۔

عمران خان نے کہا کہ جن افسروں نے چوری پکڑی اب ان سے انتقام لیا جائے گا، اب تمام افسر ایمانداری سے کام کرتے ہوئے ڈریں گے۔ نوازشریف پہلے سعودی عرب گیا، پھر لندن بھاگا، اب واپس آرہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں