پنجاب اسمبلی میں تشدد، پرویز الہٰی نے تھانہ قلعہ گجر سنگھ میں درخواست جمع کرا دی

پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی اور جھگڑے کے دوران وزارت اعلیٰ کے اُمیدوار چودھری پرویز الہٰی زخمی ہوگئے، ریسکیو اہلکاروں نے پرویز الہٰی کو طبی امداد دی۔ چودھری پرویز الہٰی نے حمزہ شہباز اور دیگر کے خلاف تھانہ قلعہ گجر سنگھ میں درخواست جمع کروا دی۔

پنجاب اسمبلی کا ایوان بنا میدان جنگ! شدید ہنگامہ آرائی میں وزارت اعلیٰ کے اُمیدوار اور اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الہٰی پر بھی دھاوا بول دیا گیا۔

ایوان میں ان کو بدترین تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے انہیں باہر نکال دیا گیا، ریسکیو اہلکاروں نے ابتدائی طبی امداد دی۔ حالت غیر ہونے پر چودھری پرویز الہٰی کو آکسیجن لگا کر اور ہاتھ پر پٹی باندھ کر ان کے چیمبر پہنچایا گیا۔ چودھری پرویز الہٰی نے کہا شریفوں کی جمہوریت میں تشدد سے ان کا بازو توڑ دیا گیا۔

تشدد کا نشانہ بننے کے بعد چودھری پرویز الہی نے تھانہ قلعہ گجر سنگھ میں اندراج مقدمہ کی درخواست جمع کروا دی۔ جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ حمزہ شہباز نے اپنے ایم پی ایز کو حکم دیا کہ پرویز الہٰی کو جان سے مار دو، پولیس ملازمین نے ایوان میں داخل ہوتے ہی ہمارے ایم پی ایز کو جان سے مارنے کی نیت سے حملہ کر دیا۔

چودھری پرویز الہٰی کے ہمراہ چودھری مونس الہٰی اور زخمی ہونے والے دیگر ارکان بھی درخواست جمع کروانے تھانے پہنچے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں