پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی پر سیکرٹری اسمبلی خان محمد بھٹی سمیت چار ملازمین معطل

پنجاب اسمبلی ہنگامہ آرائی پر سیکرٹری اسمبلی خان محمد بھٹی سمیت چار ملازمین معطل کر دیئے گئے۔

گورنر پنجاب کی زیر صدارت آئینی ماہرین کا سیکرٹری اسمبلی کی رپورٹ کی روشنی میں اجلاس ہوا۔ اجلاس میں سیکرٹری اسمبلی کی پیش کی گئی رپورٹ کا جائزہ لیا گیا۔ اس حوالے سے آئینی اور قانونی مشاورت بھی کی گئی۔ اجلاس میں گزشتہ روز پنجاب اسمبلی اجلاس کے دوران ہنگامہ آرائی کی فوٹیج کا جائزہ بھی لیا گیا۔ ذرائع کے مطابق رپورٹ میں کہا گیا ڈپٹی اسپیکر پرائیویٹ گارڈز کے ساتھ ایوان میں داخل ہوئے۔ ایوان میں سارجنٹ ایٹ آرمز کے علاوہ کوئی داخل نہیں ہو سکتا۔ اس رویے نے ارکان اسمبلی کو احتجاج پر مجبور کیا۔

رپورٹ میں کہا گیا ڈپٹی اسپیکر کے گارڈز نے خواتین ارکان کو نازیبا الفاظ سے پکارا، ہزاروں پولیس اہلکار بھی ہال میں پہنچے۔ وزیر اعلی کے نامزد امیدوار چودھری پرویز الہی پر تشدد کیا گیا ن لیگی ارکان اسمبلی نے بھی ہنگامہ آرائی کی۔ رپورٹ میں نشاندہی کی گئی کہ ڈپٹی اسپیکر کے گارڈز نے بھی خواتین کو گالیاں دیں۔

ادھر ڈپٹی اسپیکر سردار دوست محمد مزاری نے سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی سمیت چار ملازمین کو معطل کر دیا۔ سیکرٹری کوآرڈی نیشن عنایت اللہ لک، اسپیشل سیکرٹری ٹو عامر حبیب ، چیف سکیورٹی آفیسر محمد اکبر ناصر کو معطل کیا گیا۔

دوسری جانب پولیس نے اقدام قتل، تشدد اور کار سرکار میں مداخلت کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر رکھا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں