’یوٹیوب‘ کا ’ٹِک ٹاک‘ کو چیلنج، شارٹ ویڈیوز بنانے والوں کے لیے نیا اعلان

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق گوگل کی سٹریمنگ سروس یوٹیوب نے منگل کو اعلان کیا کہ وہ اپنے ویڈیو فیچر ’شارٹس‘ پر اشتہارات متعارف کرا رہی ہے جن کی آمدن کا 45 فیصد ویڈیو بنانے والوں کو ملے گا۔یوٹیوب پہلے ہی سے ویڈیو بنانے والوں(کری ایٹرز) کو آمدن کا 55 فیصد ادا کر رہی ہے جبکہ مقبول ترین شارٹ ویڈیو اپیلیکشن ٹک ٹاک نے ویڈیوز بنانے والوں کے لیے ماہانہ ایک ارب ڈالرز کا بجٹ مختص کیا ہے۔
ہیئر سٹائلسٹ کرس کولِنز جو اب یوٹیوب کری ایٹر بھی ہیں، انہوں نے شارٹس کی آمدن میں شراکت کی پیشکش پر یوٹیوب کی تعریف کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ’دوسرے پلیٹ فارم پر لوگ اپنی 15 سیکنڈ کی ویڈیوز کے ذریعے مقبول ہونے کی جانب متوجہ ہیں جو بہت اچھا ہے۔ لیکن یوٹیوب ایک مختلف انداز اختیار کر رہا ہے۔وہ تخلیق کاروں کو متعدد فارمیٹس میں مواد تیار میں مدد فراہم کر رہی ہے۔‘گزشتہ تین برس سے ویڈیو اپلیکشن ٹِک ٹاک کے ساتھ یوٹیوب کا مقابلہ چل رہا ہے اور اسی مقابلے کی فضا میں یوٹیوب نے 2021 کے اواخر میں 60 سیکنڈز دورانیے کی ویڈیو کے لیے ’شارٹس‘ کا فیچر متعارف کرایا تھا جس کے ناظرین کی تعداد اب ماہانہ ڈیڑھ ارب تک پہنچ چکی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں